The Latest

وحدت نیوز(اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے کہا ہے کہ علی رضا عابدی کے بہیمانہ قتل کی پرزور مذمت کرتے ہیں، علی رضا عابدی کی ٹارگٹ کلنگ شہر کا امن و امان خراب کرنے کی سنگین سازش ہے۔ میڈیا کو جاری ٹکرز میں ان کا کہنا تھا کہ مجلس وحدت مسلمین پاکستان علی رضا عابدی کے اہل خانہ کے غم میں برابر کی شریک ہے، علی رضا عابدی مظلوموں کے حق میں ظالموں کے خلاف توانا آواز تھی، سندھ حکومت اور قانون نافذ کرنے والے ادارے علی رضا عابدی کے قتل کے محرکات فوری سامنے لائیں۔

وحدت نیوز(اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکریٹری جنرل علامہ راجہ ناصرعباس جعفری نےرہبر انقلاب اسلامی کے دیرینہ ساتھی، سابق ایرانی چیف جسٹس اورتشخیص مصلحت نظام کونسل کے چیئرمین آیت الله ہاشمی شاہرودی کی رحلت کے دلسوز موقع پر مرکزی سیکریٹریٹ سے جاری اپنے تعزیتی پیغام میں دلی رنج وغم اور افسوس کا اظہا رکرتے ہوئے کہاہےکہ آیت اللہ ہاشمی شاہرودی کی وفات انقلاب اسلامی اور جمہوری اسلامی کا بڑا نقصان ہے، مرحوم امام خمینی ؒ کی قیادت سے لیکر امام خامنہ ای کی قیادت تک انقلاب اسلامی کے صف اول کے مدافع رہے ، انہوں نے اہم سرکاری عہدے پر فرائض باحسن وخوبی انجام دیئے، ان کی خدمات کو کسی صورت فراموش نہیں کیا جاسکتا ، مرحوم آیت اللہ ہاشمی شاہرودی کی ناگہانی وفات پر مجلس وحدت مسلمین پاکستان رہبر انقلاب اسلامی آیت اللہ خامنہ ای اور مرحوم کے پسماندگان کی خدمت میں ہدیہ تعزیت پیش کرتی ہے۔

واضح رہے کہ تشخیص مصلحت نظام کونسل کے چیئرمین آیت الله ہاشمی شاہرودی کا آج 70 سال کی عمر میں انتقال ہوگیا۔ آیت الله ہاشمی شاہرودی 1327 شمسی میں نجف اشرف میں پیدا ہوئے۔ آیت الله ہاشمی شاہرودی کئی سال تک نگہبان کونسل کے رکن رہے، جبکہ رہبر معظم انقلاب اسلامی حضرت آیت اللہ العظمیٰ سید علی خامنہ ای نے انہیں عدلیہ کا سربراہ منتخب کیا اور وہ 1378 سے 1388 شمسی تک عدلیہ کے سربراہ کے عہدے پر فائز رہے اور آج 70 سال کی عمر میں اس دنیا سے کوچ کر گئے۔

وحدت نیوز(نواب شاہ) مجلس وحدت مسلمین سندھ کے سیکریٹری جنرل علامہ مقصودعلی ڈومکی نے  ضلعی کابینہ کے ہمراہ نوابشاہ پریس کلب میں اہم پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہاکہ تین ماہ قبل ایم ڈبلیوایم کے دو کارکنوں کے قتل میں ملوث مجرموں کو فوری گرفتار کیاجائے، انہوں نے کہا کہ قاتلوں اور مجرموں کی جانب سے مقتولین کے ورثاء اور ایم ڈبلیوایم رہنما زاھد علی لیکھی کو مسلسل دھمکیاں مل رہی ہیں۔قانون نافذ کرتے والے ادارے قاتلوں کی فوری گرفتاری کے ساتھ ساتھ ایم ڈبلیوایم کے رہنمائوں اور مقتولین کے ورثاءکو دی جانے والی دھمکیوں کا بھی فوری نوٹس لیں۔

وحدت نیوز(کراچی) مجلس وحدت مسلمین کراچی ضلع وسطی کیلئے برادر کاظم محمد اکثریت رائے سے سیکریٹری جنرل منتخب ہوگئے ۔ اجلاس کے اختتام پر تقریب حلف برداری میں ایم ڈبلیو ایم کراچی کے ڈپٹی سیکریٹری جنرل علامہ مبشر حسن نے ان سے عہدے کا حلف لیا ۔ اس موقع پر نو منتخب جنرل سیکریٹری نے ضلعی شوری اور ارکان سے گفتگو کرتے ہوئے ان کے تعاون اور اعتماد پر شکریہ ادا کیا اور کہا کہ تنظیم الہی اہداف کےحصول کا موثر ذریعہ ہے ،اللہ کی توفیق شاملحال رہی تو ان اہداف کو حاصل کرلیں گے ۔شرکائے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے مرکزی کوآرڈینیٹر برائے شعبہ تنظیم سازی علامہ علی انوار جعفری نے کہا کہ ضلع وسطی کی فعالیت کے ملک بھر میں اثرات نمایاں ہوتے ہیں ۔کارکنوں کو چائیے کہ باتقویٰ اور خدمت گزار عہدیداران کا انتخاب کریںتاکہ تنظیم الہی اہداف کے راستے کو تیزی سے طے کرلے ۔ انتخابی عمل کے فرائض کراچی ڈویژن شعبہ تنظیم سازی کے سیکریٹری برادر ذیشان نے انجام دئیے ۔نو منتخب  سیکریٹری جنرل جلد اپنی کابینہ کا اعلان کریں گے۔

وحدت نیوز (کوئٹہ) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے نامزد امیدوار سابق وزیر قانون سید محمد رضا (آغا رضا)اہلیان نیو ہزارہ ٹاون جناب حاجی نائب کربلائی و آقائی حسینی کی دعوت پر ایک کارنر میٹنگ میں شرکت کی ۔جہاں اہلیان محلہ کے اکابرین سمیت ساتھ سب ٹرائب کے سربراہوں نے مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے نامزد امیدوار سید محمد رضا (آغا رضا) سے بھر پور تعاون اور حمایت کا اعلان کیا جنکا کا انتخابی نشان خیمہ ہے۔

آغا رضا نے کہا کہ ترقیاتی اسکمیوں کا اجرا ہر منتخب نمائندے کی ذمہ داری ہے لیکن اس سے زیادہ اہم ذمہ داری اپنے عوام کی مجموعی افکار کی ترجمانی کرنا ہے خود ساختہ نام نہاد نمائندوں نے خدمت کے بجائے کئی مشکلات پیدا کرنا انکی شخصیت اور سیاسی بصیرت پر سوالیہ نشان ہے
اگر اللہ نے چاہا اور ہم کامیاب ہوئیں تو ان مسائل کے حل کیلئے ہر ممکن اقدامات کریں گے۔

وحدت نیوز(حیدرآباد) محترمہ عظمیٰ تقوی مجلس وحدت مسلمین پاکستان شعبہ خواتین کی مرکزی سیکریٹری نشرواشاعت نامزد ہوگئی ہیں، محترمہ عظمیٰ تقوی کی بحیثیت مرکزی سیکریٹری نشرواشاعت تقرری کا اعلان ایم ڈبلیوایم شعبہ خواتین کی مرکزی سیکریٹری جنرل اور رکن پنجاب اسمبلی محترمہ سیدہ زہرانقوی نے دورہ حیدر آباد کے موقع پر کیا جبکہ انہوں نے محترمہ عظمیٰ تقوی سے ان کے عہدے کا حلف بھی لیا، اپنے دورہ حیدر آباد کے موقع پر انہوں نے ضلع حیدر آبادشعبہ خواتین کی عہدیداران سے ملاقات بھی کی اور تنظیمی امور پر تبادلہ خیال کیا۔

نظامِ تعلیم یا ناسور

وحدت نیوز(آرٹیکل) آپ سکول کھولئے، اچھا کاروبار ہے،ساتھ  یہ مشہور کر دیجئے کہ آپ کے سکول میں امریکن و انگلش نظام تعلیم ہے، یہ مشہور کرنے سے آپ کے سکول کی  اوقات بڑھ جائے گی،طلبا کارش زیادہ ہوجائےگا اور والدین کی واہ واہ بھی  سننے کوملے گی۔

بلاشبہ  امریکہ و مغرب کے تعلیمی نظام کا تصور ہمارے ہاں بہت مقبول ہے،لیکن کیا کبھی ہم نےاس نظام تعلیم کے نتائج پر بھی غور کیا ہے ، بعنوان مثال غصے میں  آکر انسان کا انسان کو قتل کردینا، یا مشتعل ہوکر کسی کو زدوکوب کردینا ایک افسوس ناک امر ہے لیکن مغربی اور امریکی دنیا میں انسان کے انسان کو قتل کرنے یا زدوکوب کرنے  کے لئے غصے  میں آنے  یا مشتعل ہونے کی ضرورت نہیں ہے۔امریکی و مغربی نظام تعلیم کا اثر یہ ہے کہ وہ غصے یا اشتعال کے بجائے قہقہے لگاتے ہوئے انسانوں کا قتل ِ عام کرتے ہیں۔

  امریکہ و مغرب میں انسان  کو جو تعلیم دی جاتی ہے اس کا تجربہ آپ اس وقت کیجئے جب وہ آپ کو یہ پیغام دیتے ہیں  کہ ہم  نے فلاں ملک       پر   اپنے مفادات کی خاطر حملہ کرنا ہے، آپ یا تو ہمارے ساتھ اس ظلم کو انجام دینے میں شریک ہوجائیں اور یا پھرآپ بھی ظلم سہنے کے لئے تیار ہوجائیں۔اگر آپ کو یاد ہو تو  یہی وہ  پیغام  تھا جواسی مفہوم مگر مختلف عبارت کےساتھ  امریکہ نے افغانستان پر حملہ کرتےہوئے پاکستان کو بھی دیا تھا۔

دوسری طرف اسلام کا پیغامِ تعلیم  یہ ہے کہ جو ظلم کرے وہ بھی قابلِ مذمت ہےاورجو ظالم کا مدد کرنے والا ہے وہ بھی مذموم ہے  اور  ظلم کو سہنا بھی ایک قبیح فعل ہے۔ یعنی اسلامی تعلیمات کی رو سے ظلم کرنا ، ظالم کی مدد کرنا اور ظلم سہنا یہ تینوں قابلِ مذمت افعال ہیں۔

اگر آپ مزید امریکہ ومغرب کے نظام تعلیم کے کرشموں کو باریک بینی سے دیکھنا چاہیں تو ابوغریب اور گوانتامو کی جیلوں میں مقیدقیدیوں کے حالات زندگی کا مطالعہ کریں کہ جہاں کوئی شخص ،مشتعل ہوکر اور غصےمیں آکر  کسی انسان کے بدن میں ڈرل مشین سے سوراخ نہیں کرتا بلکہ ایک پڑھا لکھا انسان، استری شدہ پینٹ اور کوٹ میں ملبوس، بہترین پرفیوم لگائے ہوئے، قہقہے لگاتے ہوئے اورمسکراتے ہوئے بے چارے قیدیوں کو پکڑ کر ان کے جسم کا قیمہ بناتاہے اور انہیں برہنہ کر کے ان   پر بدترین تشدد کرتا ہے۔

امریکی و مغربی نظام تعلیم و تربیت سے گزرے ہوئے لوگوں کو کسی پر ظلم کرنے کے لئے  قطعا مشتعل ہونے یا غصے  میں ا ٓنے کی ضرورت نہیں  پڑتی بلکہ ظلم اور تشدد ان کی فطرت ثانیہ بن جاتا ہے۔ جہاں ان کا مفادپورا نہیں ہوتا وہاں ان کی تعلیم و تربیت اپنا اثر دکھا تی ہے۔

آپ ایک طرف ان کے انسانی حقوق کے نعرے دیکھئے اوردوسری طرف کشمیر اور فلسطین    کے    مسائل  کو  ہی لیجئے ،یہ دونوں مسئلے یورپ اور امریکہ کے پیدا کردہ ہیں اور  اگر کہیں ایک اسرائیلی  فوجی مارا جائے تو سارا یورپ اور امریکہ غمزدہ ہوجاتا ہے لیکن فلسطینیوں کو ان کے گھروں سے بے گھر کیے جانے پر یورپ و امریکہ کے ایوانوں میں کسی قسم کا زلزلہ نہیں آتا، ان کے ہاں ایک سلمان رشدی کی جان کی اتنی اہمیت ہے کہ سارے کشمیریوں کی اس کے مقابلے میں کوئی حیثیت نہیں۔

امریکہ و یورپ کے نظامِ تعلیم و تربیت کو سمجھنے کے لئے اس  بات کو سمجھئے کہ دنیا میں جہان بھی کوئی مسئلہ ہے وہاں امریکہ و  یورپ کی مداخلت ہےاور جہان بھی قتل وغارت اور خون ریزی ہے وہاں انہوں نے داعش، القاعدہ، طالبان اورلشکر جھنگوی جیسے مزدور پال رکھے ہیں۔الغرضیکہ ہمارے تھانوں اور کچہریوں کا نظام بھی  اسی  استعمار کا دیا ہوا ہے جس کی وجہ سے وہاں بھی لوگو ں کو انصاف مہیا کرنے کے بجائے  رقم بٹوری جاتی ہے۔

یہ مغرب اور امریکہ  کی مفاد پرستی   ہی ہے جو مغربی و امریکی نظام تعلیم کی بنیادیں فراہم کرتی ہے اور جس کے بعد پیسہ کمانے کے لئے  بڑے بڑے شاندار ہسپتال تو تعمیر کئے جاتے ہیں لیکن ڈاکٹروں کی فیسیں اتنی بھاری ہوتی  ہیں کہ لوگ علاج کے بغیر ہی مر جاتے ہیں۔بلکہ بعض مقامات پر پیسے کے پجاری لوگوں کے گردے تک نکال کر بیچ دیتے ہیں۔

امریکہ  و مغربی تعلیم یافتہ لوگ غلطی سے ایک آدمی کو بھی قتل  نہیں کرتے بلکہ  اپنے مفادات کے لئے مکمل پلاننگ اور منصوبہ بندی سے ممالک میں داخل ہوتے ہیں، حکومتوں میں نفوز کرتے ہیں، اداروں کو استعمال کرتے ہیں اور انسانی جانوں کے ساتھ کھیلتے ہیں۔آپ کے سامنے شام ، عراق ، افغانستان اور یمن کی صورتحال ہے، آپ خود  دیکھ لیجئے کہ یہ جہاں داخل ہوئے  انہوں نے  وہاں کے  بچوں، خواتین اور بوڑھوں کو کس  حال میں پہنچا دیا ہے۔

ان کے سامنے کوئی اصول، کوئی ضابطہ اور کوئی قاعدہ نہیں، حتی کہ ان کے ہاں جمہوریت بھی ایک ایسی لونڈی کی حیثیت رکھتی ہے کہ جو  ان کے مفادات  کے لئے کام کرتی ہے ورنہ یہ بادشاہت و آمریت کے سرپر ہی دستِ شفقت رکھ دیتے ہیں، جیساکہ انہوں نے عرصہ دراز تک صدام کے سرپر دستِ شفقت رکھا اور آج کل عرب ریاستوں کے سروں پر ان کا دستِ شفقت ہے۔ان کی آشیر باد سے سفارتخانوں میں صحافی قتل ہوتے ہیں اور یمن میں ایک گھنٹے کے اندرایک بچہ بھوک سے  مرجاتا ہے۔

کشمیر و فلسطین  کو تو اب رہنےہی دیجئےاور امریکہ ومغرب کے بارے میں اپنی معلومات کو وسعت دینے کے لئے ان گزشتہ چند سالوں میں یوگوسلاویہ، بوسنیا،  فلوجہ، یمن  اور کوفہ میں امریکیوں و مغربیوں کے ہاتھوں بلواسطہ یا بلاوسطہ  مسلمانوں کے قتلِ عام کی تاریخ کی تحلیل کیجئے اور دیکھئے کہ کس بے دردی سے انہوں نے ان چند سالوں کے اندر اپنے مفادات کے حصول کے لئے انسانی جانوں کو قربان  کیا ہے۔

ہم آپ کو فقط اتنا یاد دلاتے ہیں کہ جنگ ِعراق کے دوران عراق کے شہر فلوجہ پر ریاستہائے متحدہ امریکا نے 2003ء کومحاصرہ کر کے قبضہ کر لیا تھا۔ اس حملے میں غیر قانونی ہتھیاروں کے استعمال سے امریکی فوجیوں نے عام  شہریوں کو نشانہ بنایا  جس کے طبی اثرات وہاں پیدا ہونے والے بچوں میں آج بھی موجود ہیں۔

امریکی و مغربی ثقافت ا ور تعلیمی نظام سے متاثر ہونے کا  نتیجہ یہ ہے کہ ہمارے ہاں بھی صرف پیسہ ہی  لوگوں کی زندگیوں کا ہدف بن گیا ہے۔پولیس اور ایف سی جن کا  فلسفہ وجودی ہی قانون کی حفاظت ہے وہ بھی رشوت لیتے ہیں ، اسی طرح دیگر اداروں میں بھی عوام کی خدمت کے بجائے عوام کو  لوٹنے کا رجحان پایا جاتا ہے اور ادارے لوگوں کو ماورائے قانون اغوا کر لیتے ہیں۔یہ سب ناقابلِ اصلاح نہیں بلکہ قابلِ اصلاح ہے۔

اگر ہم اصلاحِ احوال چاہتے ہیں تو  نظامِ تعلیم کو تبدیل کرنے کی اشد ضرورت ہے ،نہ صرف یہ کہ امریکہ و مغرب کا نظام تعلیم انسانیت کے لئے زہرِ مہلک ہے بلکہ  ایسا نظام تعلیم  بھی  جس میں امریکہ و یورپ کی تاریخی و ثقافتی منافقت اور دوغلے پن کو اسلامیات کے ساتھ مخلوط کر کے  بچوں کو پڑھایاجاتا ہے  وہ بھی انسانیت کے لئے سمِ قاتل ہے۔ ہمیں ایک ایسے نظامِ تعلیم  کی ضرورت ہے کہ جس میں اسلامی متون  کے اندراجتہاد کر کے ایک مکمل نظامِ تعلیم کی بنیادڈالی جائے تاکہ ہمارے طالب علم، دینِ اسلام کو ایک فطری اور معقول دین سمجھ کر قبول کریں اور مال و مفاد نیز  پیسے کی دوڑ میں لگنے  کے بجائے علم اور ٹیکنالوجی  کے ذریعے  سے مظلوم انسانیت، مٹتی ہوئی عدالت، دم توڑتے ہوئےانصاف اور مضطرب سماج کی  خدمت کرسکیں۔

انسان معاشرے میں اور معاشرہ تاریخ میں رشد کرتا ہے۔ آپ تاریخی تجربے کی روشنی میں آج اپنے  جدیدنظام تعلیم کو اسلامی اجتہاد  کی بنیادوں پر اسوار کیجئے ، اگلے چند سالوں میں آپ کا معاشرہ تبدیل ہوجائے گا۔


تحریر: نذر حافی

This email address is being protected from spambots. You need JavaScript enabled to view it.

وحدت نیوز(کوئٹہ) مجلس وحدت مسلیمن پاکستان کے نامزد امیدوار سابق وزیر قانون سید محمد رضا (آغا رضا) ضمنی الیکشن پی بی 26 کے سلسلے میں مختلف کارنر میٹنگ میں سیاسی شخصیات قبائلی عمائدین اور کارکنوں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ قوم دوستی کے دعویداروں نے اس حلقہ میں کتنی ترقیاتی اسکیموں کا اجرا کیا اور ایم ڈبلیو ایم نے الیکشن 2013 کے بعد پسماندگان شہداء کیلئے 64 رہائشی فلیٹس کی تعمیر کا اجرا کر دیا تھا جو کہ اس حلقہ کے عوام کا حق ہے۔

 انہوں نے کہا کہ ہماری کامیابی یقینی ہے اللہ نے چاہا اورعوام نے ہمیں حق نمائندہ گی دی تو یہاں کے بنیادی شہری حقوق کیلئے جد و جہد جاری رکھیں گے اور عوامہ مسائل کو کم کرنے کی ہر ممکن کوشش کریں گے۔مجلس وحدت مسلمین کے نامزد امیدوار آغا رضا نے کہا کہ اس حلقہ کے عوام کی طرف سے محبت اور اعتماد نا قابل بیان ہے۔آغا رضا نے کہا کہ عوام کی اکثریت نے الیکشن سے پہلے ہی مجلس وحدت مسلمین کی نظریہ اتحاد کی تائید اور بھر حمایت کا اعلان کر کے اپنے سیاسی بلوغت کا ثبوت دے دیا ہے۔31 دسمبر کو خیمہ کے نشان پر مہر لگا کر تمام منفی عناصر کو رد کر دیں گے۔

وحدت نیوز (اسلام آباد) قومی دولت لوٹنے والوں سے پائی پائی کا حساب لیا جائے، فلیگ شب ریفرینس میں تحقیقاتی ا داروں کے کردار نے مایو س کیا ،ان خیالات کا اظہار مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے سربراہ علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے میڈیا سیل سے جاری بیان میں کیا، انہوں نے کہا کہ جے آئی ٹی کا بڑے مگرمچھوں کے خلاف مظبوط ثبوت مہیا نا کر سکنا تحقیقاتی اداروں کی کارکردگی پر سوالیہ نشاں ہے ۔ پاکستان لوٹنے والوں کواگر اسی طرح ڈھیل دی جاتی رہی تو ملک کو دوالیہ ہونے سے بچانا ناممکن ہو گا۔ احتساب کا عمل بلا امتیاز سب کے لئے ایک جیسا چاہتے ہیں احتساب کا عمل بے رحمانہ ہونا چاہئے۔ قومی دولت کے لٹیروں سے پائی پائی کا حساب لینا ہو گا۔ تحریک انصاف کی حکومت کرپٹ عناصر کے خلاف کام کرنے والے اداروں کے ہاتھ مظبوط کرے اور انہیں اس حوالے سے درپیش مسائل کو دور کرنے کے لئے قانون سازی کرئے ۔ قومی مجرموں کا ڈٹ کر مقابلہ کرئے عوام ساتھ دے گی۔وطن عزیز کی ترقی کے لئے ملک کو لوٹنے والے مافیاز سے نجات حاصل کرنا ناگزیر ہو چکا ہے ۔

وحدت نیوز (ڈیرہ اسماعیل خان) مجلس وحدت مسلمین اور تحریک تحفظ شیعہ وقف کوٹلی امام حسین علیہ السلام کی مشترکہ میٹنگ میں کوٹلی امام حسین (ع) کی اراضی سے متعلق اہم فیصلے کئے گئے ہیں۔ ایم ڈبلیو ایم کی ضلعی کیبنیٹ جس میں تحریک تحفظ شیعہ وقف کوٹلی امام حسین (ع) کی جانب سے بشیر حسین جڑیہ نے شرکت کی۔ اس موقع پر مجلس وحدت مسلمین کے ضلعی سیکرٹری جنرل علامہ غضنفر نقوی کا کہنا تھا کہ عزاداری امام حسین (ع) پر کوئی سمجھوتہ نہیں کرسکتے، ہم مجالس امام حسین (ع) کے لئے کسی کی اجازت کی احتیاج نہیں رکھتے اور نہ ہی ایسا ممکن ہوسکتا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ عزاداری ہماری حیات کی ضمانت ہے، اس کے امور پر انتظامیہ کی طرف سے غیر مناسب رویہ کی مذمت کرتے ہیں۔ انھوں نے یہ بھی کہا کہ جب بھی مجالس ہوئی ہیں یا ہوں گی ہماری کوشش رہی ہے کہ مجلس سے پہلے متعلقہ تھانے کو اطلاع دی جاتی ہے، تاکہ سکیورٹی کے مسائل پیش نہ ہوں، مجلس کے لئے اجازت نہیں بلکہ سکیورٹی کو مدنظر رکھتے ہوئے متعلقہ تھانے کو اطلاع دینا مناسب اقدام ہے۔

اس میٹنگ میں یہ بھی واضح موقف اپنایا گیا کہ علی امین خان گنڈہ پور نے کوٹلی امام حسین علیہ السلام کے لئے جو وعدہ کیا تھا، اس وعدے کو پورا کریں کہ 327 کنال 9 مرلے کا انتقال بحال کیا جائے۔ تحریک تحفظ شیعہ وقف کوٹلی امام حسین (ع) کے مرکزی کنوینئر بشیر حسین جڑیہ کا کہنا تھا کہ ہم 119 کنال اراضی پہ چاردیواری کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہیں، ہمیں 119 کنال کی چاردیواری قطعاً منظور نہیں نیز یہ کہ ہم چاردیواری کے مخالف نہیں لیکن یہ چاردیواری 327 کنال 9 مرلے کے گرد دی جائے۔ ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ 119 کنال اراضی پہ چار دیواری کی حمایت اور خیر مقدم کرنے والے اہل تشیع ڈیرہ کے دوست نہیں ہوسکتے۔

Page 7 of 903

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree